قید ِ کشمیر
قلمکار‎ : الماس رعناخان

نظم

قید ِ کشمیر

(۵؍اگست۲۰۲۰کشمیرمیں لاک ڈاؤن کا ایک سال)

 ہاںیہ ایک برس قید کا
خوف کا امید کا
ان کے ظرف و کمال کا
اور اپنے زوال کا

یہ ایک برس انتظار کا
کسی ایوبی اور کسی کا قاسم کے لال کا
ناامیدی میں بدل گیا
یہ برس امید کا

تنگ  ہیں یہ راستے
ہموار ہیں  ہاں منزلیں
یا رب اب بھیج دے
لال ابن ولید کے

یا رب تو نکال دے
پھر قافلے توحید کے
دے ہم میں وہ حوصلے
کہ پھر ظلم کو للکار دے
آرزو ہے الماس کی

پھر حکومت فاروق ہو
عدل کے ہوں فیصلے
نہ کمی ہو نہ ہو نہ زیادتی
اور کشمیر ہو آزاد پھر