فوزیہ ربابؔ

نظم

نظم

قلم اٹھاؤ ! قلم اٹھاؤ اداس لوگو ! اداسیوں کا لباس تن سے اتار پھینکو اے خواہشوں کے اسیر لوگو !...

بیٹیاں

بیٹیاں

بیٹیاں زخم سہہ نہیں پاتیں بیٹیاں درد کہہ نہیں پاتیں بیٹیاں آنکھ کا ستارہ ہیں بیٹیاں درد میں سہارا...