وہ دونوں عمر کے اس دور میں ہیں
جس کا تصور عموماً خوشگوار نہیں ہوتا
بڑھاپا
بیماریوں اور کمزوریوں کا دور
زمانے کے لئے ناکارہ اور غیر نفع بخش عمر
مردم بے زاری اور چڑچڑے پن کا زمانہ
صرف اپنی تکلیفوں اور پریشانیوں کی فکر
زوجین آپس میں نوک جھونک کرتے ہوئے یا سرد ساتعلق
ارذل العمر
لیکن ان دونوں نے اس دور کو خوشگوار بنایا
شادی کے ابتدائی دور کی طرح بچوں کی فکرسے آزاد ہیں
اس بے فکری کے دور کو ایک دوسرے پر محبت و الفت لٹاتے ہوئے پر لطف بنادیا
ایک دوسرے سے صرف توقعات وابستہ نہیں کیے، بلکہ ایثار وقربانی کا مظاہرہ کرتے ہیں
زمانہ بیزاری نہیں، بلکہ زندہ دلی کا اظہار کرتے ہیں
شکوہ شکایت کے لئے انہیں وقت ہی نہیں ملتا ،کیونکہ دور طالب علمی ابھی ختم ہی نہیں ہوا
سیکھنے اور سکھانے کا سلسلہ ابھی بھی جاری ہے
اپنے مشوروں اور تجربات سے لوگوں کو فائدہ پہنچاتے ہیں
لوگوں کے کام آنے کی حتی المقدور کوشش کرتے ہیں
پوتوں نواسو ں کی تربیت میں اپنا بہترین رول پیش کرتے ہیں
ایک دوسرے کی اور خود کی صحت کا خیال رکھتے ہیں
شکر گذاری اور مثبت سوچ اپنا کر مطمئن رہتے ہیں
اس عمر میں بھی لوگوں کے لئے نفع بخش ہیں
بڑھاپے کو اضافی وقت کی صورت میں ملی نعمت سمجھتے ہیں
اس عمر کو بہ مشکل کاٹنے کے بجائے بیش قیمتی سرمایہ سمجھ کر خدا کو راضی کرنے میں استعمال کرتے ہیں
بزرگوں کی تنہائی آج کل سب سے بڑا مسئلہ ہے ۔
ایک عمر رسیدہ خاتون صرف اس لیے اسپتال سے جانے پر آمادہ نہیں ہیں کہ یہاں پر ان کی ملاقات روز کئی انسانوں سے ہوجاتی ہے۔ ورنہ وہ ہیں اور ان کی تنہائی، جو کہ مارے ڈالتی ہے۔ ایک ڈاکٹر نے بتایا کہ وہ ایک عمر رسیدہ مریض کا معائنہ کرنے آئے تو نرس سے کہا کہ ان کو کروٹ دلوائیں، اور ڈاکٹر نے خود بھی بزرگ کا ہاتھ تھام لیا تو وہ بچوں کی طرح کہنے لگا کہPlease Hold Me Tightly وہ انسانی ہاتھ کا لمس محسوس کرنا چاہتا تھا، جس سے وہ شاید عرصے سے محروم ہے۔
ایسی حالت میں تصویر میں موجود بڑھاپے کو دیکھیں کہ زوجین میں اظہار کے فقدان کو محسوس کیا ،نہ صرف محسوس کیا بلکہ اظہار کاانداز یوں ہوتا، سوتے ہوئے دونوں ایک دوسرے کا ہاتھ تھامے رہتے۔نہ جانے کیوں زوجین کے رشتے میں اظہار پر شرم مانع رہتی ہے، یا لحاظ کا احساس معنوی دوریاں بنانے پر آمادہ رکھتا ہے ۔
ازدواجی زندگی میں یہ عہد بھی زندہ دلی کے ساتھ ایک دوسرے کے تعاون سے خوشگوار گزارا جاسکتا ہے ،کیمرے کی آنکھ نے تصویر میں یہ لمحے مقید کیے ،جو ہر بزرگ جوڑے کے لیے مشعل راہ بن گئے۔

0 Comments

Submit a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

اگست ٢٠٢٢