بلاگنگ اور روزگار کے ذرائع
تیزی سے بڑھتی ہوئی آبادی کی طرح بے روزگاری کا مسئلہ بھی چند ترقی یافتہ ممالک کو چھوڑ کر پوری دنیا کا مسئلہ بنا ہوا ہے۔ ہندوستان میں تو یہ مسئلہ سنگین صورتِ حال اختیار کرتا جارہا ہے۔ آج کروڑوں کی تعداد میں ہندوستان کا تعلیم یافتہ نوجوان ملازمت کی تلاش میں سرگرداں ہے۔یہ مسئلہ اچانک نمودار نہیں ہوا۔لیکن تعلیم کا رجحان جیسے جیسے بڑھتا گیا، ویسے ویسے یہ مسئلہ بھی کھڑا ہوتا گیا۔اسی بے روزگاری کے چلتے ہمیں لاک ڈاؤن جیسی صورت حال کا بھی سامنا کرنا پڑا۔لاک ڈاؤن کے اس مشکل وقت میں ہر فرد کا ساتھی صرف انٹرنیٹ ہی بن سکا۔ جہاں بات پھر گروسری کی ہوں یا دوائیوں کی، کتابیں ہوں یا کاسمیٹکس، کپڑے، جوتے، الیکٹرانک وغیرہ ہر ضرورت کی چیز کو حاصل کرنے کے لیے لوگوں نے آن لائن شاپنگ کو ترجیح دی۔ اسی بے روزگاری کے چلتے ہر کوئی آن لائن پیسے کمانے کی طرف ہجرت کررہا ہے۔
انٹرنیٹ کے اس دور میں ہر کوئی آسان کمائی کے راستے تلاش کررہا ہے۔ جیساکہ ہم جانتے ہیں گھر بیٹھے روزگار حاصل کرنے کے مختلف ذرائع موجود ہے۔ان مختلف ذرائع میں بھی الگ الگ ضمنی ذرائع موجود ہوتے ہیں اور ان ہی میں سے ایک کیٹیگری بلاگنگ(Blogging) ہے۔
مفہوم:
لفظ بلاگ انگریزی زبان کے الفاظ ’’ web‘‘ اور ’’ log‘‘ کے ملاپ سے وجود میں آیا ہے۔ بلاگ ایسی تحریر یا مضمون کو کہتے ہیں جو ورلڈ وائیڈ ویب (ڈیجیٹل میڈیا/الیکٹرانک بیجز) پر شائع کی جاتی ہے۔
آسان لفظوں میں آپ اسے ڈیجیٹل ڈائری بھی کہہ سکتے ہیں، جہاں آپ اپنے نقطۂ نظر، اپنے تجربات و مشاہدات اور خیالات کو لاکھوں لوگوں تک پہنچا سکتے ہیں۔ معاشرتی مسائل، سیاست، تعلیم، کھیل، فیشن اور دیگر کئی چیزوں پر تبصرے کرسکتے ہیں۔ جہاں لکھنے کے لیے آپ کسی ادارے یا ویب سائٹ کی پالیسیز کے پابند نہیں ہوتے۔ آپ کا لکھا عوامی ہوتا ہے، جسے لوگ پڑھتے ہیں اور تبصرہ و تنقید کرتے ہیں۔
بلاگنگ کرنے کا مطلب ہے کہ اپنے بلاگ میں نئے مضامین شامل کرنا۔ اگر آپ نے کسی مضمون میں مہارت حاصل کر لی ہے، یا آپ اپنا تجربہ دوسروں کے ساتھ شیئر کرنا چاہتے ہیں، تو آپ اسے اپنی ڈائری میں یا کسی بھی بلاگ یا ویب سائٹ پر لکھ سکتے ہیں، اسی عمل کوBloggingکہتے ہیں۔
بلاگز کی بہت سی قسمیں ہیں، جیسے پرسنل بلاگ، فوڈ بلاگ، ٹیک بلاگ، فائنانس بلاگ، ٹراویل بلاگ اور موٹیویشن بلاگ وغیرہ۔ آپ جس موضوع میں دلچسپی رکھتے ہیں، اس میں آپ اپنا بلاگ بنا سکتے ہیں۔ شرط صرف یہ ہے کہ آپ کو کسی کی کاپی نہیں کرنی ،بلکہ جو کچھ آپ کے بلاگ میں آئے اسے لکھنا ہوگا۔اس کے ساتھ، آپ کے بلاگ کے مواد ہمیشہ نئے اور منفرد ہونے چاہیے۔
بلاگ لکھنے سے پہلے کیا کرنا چاہیے؟
بلاگ لکھنے سے پہلے آپ کو اچھی طرح جان لینا چاہیے کہ آپ کو کیا کرنا ہے؟ یہ بہت اہم ہے۔ کیوں کہ جب تک آپ خود کو نہیں سمجھیں گے، آپ شروعات کیسے کریں گے؟
صحیح موضوع منتخب کریں
بلاگ لکھنے سے پہلے آپ کو یہ معلوم کرنا ہوگا کہ آپ اسے کس موضوع پر لکھنا چاہتے ہیں۔ اگر آپ کو اس موضوع کا اچھی طرح علم ہے تو آپ کو اس موضوع پر لکھنے میں کوئی پریشانی نہیں ہوگی۔
کی- ورڈ کی تحقیق کریں
کسی بھی بلاگ کو لکھنے کے لیے کی- ورڈ کی تحقیق بہت ضروری ہے۔ کی- ورڈ کے بغیر، آپ آسانی سے اپنے بلاگ کو کسی بھی وقت گوگل پر درجہ بندی حاصل کر سکتے ہیں۔کی- ورڈ ریسرچ کے لیے سب سے پہلے آپ کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ آپ کس موضوع پر لکھنا چاہتے ہیں۔ اس کے بعد آپ موضوع کے لیے کی- ورڈ تلاش کر سکتے ہیں۔
چند اہم نکات:
جب آپ پہلی بار بلاگ لکھتے ہیں تو آپ کے ذہن میں طرح طرح کے سوالات آتے ہیں کہ کیسے شروع کریں اور کہاں سے شروع کریں۔ تو اس تعلق سے بنیادی معلومات پیش کی جا رہی ہیں:
سب سے پہلے آپ کو Blogger.Com پر جانا ہوگا اور اس کے بعد جو بلاگ آپ نے بنایا ہے اسے کھولیں۔
بلاگر کے ڈیش بورڈ میں آپ کو نیو پوسٹ کا آپشن نظر آئے گا، آپ کو اس پر کلک کرنا ہوگا۔
آپ کو Create New Post پر کلک کرنا ہوگا، جس سے ایک نیا صفحہ کھل جائے گا۔
جہاں ٹائٹل لکھا ہے، وہاں آپ کو Headline لکھنی ہوگی۔
یہ سرخی H1 میں ہے، جو آپ کے بلاگ پوسٹ کا موضوع دکھاتی ہے۔
اس کے بعد آپ کو پیراگراف لکھنا شروع کرنا ہوگا، آپ کو اپنے مضمون کے بارے میں 2 سے 3 پیراگراف میں بتانا ہوگا، یہ کس موضوع میں ہوگا۔
اگر آپ کے پیراگراف مکمل ہیں، تو آپ کی سرخی H2 میں ہونی چاہیے۔
بلاگ لکھتے وقت نوٹ کریں کہ آپ نے بلاگ پوسٹ میں انٹرنل لنکنگ ضرور کی ہو۔
بلاگ لکھنے کے بعد، آپ کو اس کی کیٹیگری یعنی لیبل شامل کرنا ہوگا۔ جس کی مدد سے آپ مختلف موضوعات پر لکھ سکتے ہیں۔
بلاگ پوسٹ کو شائع کرنے سے پہلے، Permalink کو صحیح طریقے سے اپنی مرضی کے مطابق بنائیں، تاکہ اگر Url گوگل میں انڈیکس ہو تو کوئی مسئلہ نہ ہو۔
آپ کو بلاگ پوسٹ میں تصویر کا استعمال کرنا چاہیےاور اس کے بعد اپنے بلاگ کو مکمل پڑھیں اور کسی بھی غلطی کو دوبارہ چیک کریں اور پھر بلاگ شائع کریں۔
فری میں بلاگ لکھ کر کیسے پیسے کمائیں؟
آپ اپنے Gmail اکاؤنٹ کے ذریعے مفت میں بلاگ لکھ سکتے ہیں۔ اس کے لیے درج ذیل نکات پر توجہ دیں:
سب سے پہلے اپنے براؤزر کے ذریعے Blogger.com پر جائیں۔ پلے سٹور پر بلاگر نام کی ایک ایپ بھی دستیاب ہے۔ آپ اسے انسٹال کرکے بلاگ بھی لکھ سکتے ہیں۔
blogger.com کا صفحہ کھولنے کے بعد اس میں لاگ ان کریں۔
جس موضوع پر آپ نے بلاگ لکھنے کا سوچا ہے، اس کا نام درج کریں اور اسی نام سے آپ کا بلاگ معلوم ہونا چاہیے۔
پھر اپنے بلاگ کے نام سے متعلق ایک منفرد بلاگ ایڈریس درج کریں۔
اب آپ کی سکرین پر بلاگ تھیم لکھی ہوئی ہے، اپنی تھیم کے مطابق تھیم درج کریں۔
اب صرف Create blog پر کلک کریں اور اپنا نیا بلاگ لکھنا شروع کریں۔
بلاگ لکھنے کے کچھ پلیٹ فارمز
WordPress.org
Gator
WordPress.com
Blogger
Tumblr
Medium
Squarespace
Wix
Ghost
Fiverr.com
SEO کیا ہے؟
SEO کا پورا نام سرچ انجن آپٹیمائزیشن
(Search Engine Optimization) ہے۔
یہ بلاگنگ کا ایک عمل ہے، جو ہمارے بلاگ کو گوگل کے سرچ انجن پر پہلے صفحے پر درجہ بندی کرنے میں مدد کرتا ہے۔ اپنے بلاگ کو SEO فرینڈلی بنانا اور گوگل پر درجہ بندی کرنا اتنا آسان نہیں ہے۔ لیکن یہ زیادہ مشکل بھی نہیں ہے۔ اگر آپ اسے احتیاط سے کریں تو آپ آسانی سے اسے کرسکتے ہیں۔
بلاگ سے پیسے کیسے کمائے جائیں؟
آپ کے بلاگ سے پیسے کمانے کے بہت سے طریقے ہیں، جنہیں آپ اپنے بلاگ کو monetize کرنے کے لیے استعمال کر سکتے ہیں۔ نوٹ کرنے کی بات صرف یہ ہے کہ آپ کو ان طریقوں کو اپنے بلاگنگ کی سطح اور اپنے بلاگ کی قسم کو سمجھنے کے بعد ہی استعمال کرنا ہے۔ آپ کی بلاگنگ کی سطح آپ کے تجربے اور آپ کے بلاگنگ کے انداز سے یہ تمام بلاگرز مختلف ہیں اور ہونے چاہئیں۔
انٹرنیٹ پر آپ کو استعمال کرنے کے لیے بہت سے اشتہاری نیٹ ورکس ملیں گے۔ لیکن ان میں سے، آپ کو اپنے بلاگ کے لیے بہترین کا انتخاب کرنا ہوگا، جو آپ کو آسانی سے اور وقتاً فوقتاً ادائیگی کرتا ہے۔
انٹرنیٹ کی دنیا میں دو اشتہاری نیٹ ورک بہت مشہور ہیں:ایک گوگل ایڈسینس (Google Adsense)اور اور دوسرا media.net۔ ان نیٹ ورکس سے منظوری حاصل کرنے کے لیے آپ کے پاس ایک بلاگ ہونا ضروری ہے۔ وہ خود بخود آپ کے مضمون کے سیاق و سباق کے مطابق اور صارف کی دلچسپی کی بنیاد پر اشتہارات دکھاتے ہیں۔ زیادہ تر نئے بلاگرز اپنے بلاگ کومونیٹائز کرنے کے لیے یہ طریقہ استعمال کرتے ہیں کیوں کہ یہ انہیں بار بار آنے والی آمدنی فراہم کرتا ہے۔
لہٰذا اگر آپ ان نیٹ ورکس کو استعمال کرنا چاہتے ہیں، تو آپ کو ان کی منظوری کے لیے درخواست دینا ہوگی، جب کہ ایک بار جب آپ کو اس سے منظوری مل جاتی ہے، تو آپ آسانی سے اپنے ٹریفک کے مطابق اچھی رقم کما سکتے ہیں۔
دوسروں کو خدمات فراہم کرنا
اگر آپ محسوس کرتے ہیں کہ آپ کے پاس کچھ مہارتیں ہیں جن کی دوسروں کو ضرورت ہے، تو آپ دوسروں کو اسی طرح کی خدمات دے کر پیسہ کما سکتے ہیں۔ مثال کے طور پر، آپ بہت سی خدمات فراہم کر سکتے ہیں جیسے کہ مواد کی تحریر، لوگو تخلیق، SEO، سائٹ کی اصلاح وغیرہ۔ اگر آپ اسی طرح کی خدمات شروع کرنا چاہتے ہیں تو آپ کو صرف اپنے بلاگ پر اپنی خدمات کی فہرست پیش کرنا ہے۔ ایسی جگہ جہاں زائرین کی توجہ آسانی سے حاصل کی جا سکے۔ ایک بار جب آپ اسے شروع کر دیں گے، تو آپ بھی اسے اچھے طریقے سے سمجھنے لگیں گے۔
ای-بک Ebook فروخت کرنا
ایسے کئی بلاگرز ہوتے ہیں جو اپنی مہارت اور تجربہ ای بک کی صورت میں فراہم کرتے ہیں۔ ایک ہی وقت میں، وہ آسانی سے اپنی اس مصنوعات کو فروخت کرتے ہیں۔ بس اس کے لیے آپ کو اپنی مہارت کو سمجھنا ہوگا اور اسے کتاب کی صورت میں فراہم کرنا ہوگا۔
اگر آپ چاہیں تو، آپ اپنی ای- بک اپنے پلیٹ فارم پر بیچ سکتے ہیں یا آپ اسے Amazon پر بھی بیچ سکتے ہیں۔واقعی اپنی پروڈکٹ بیچنا ای- بکس آن لائن فروخت کرنے کا ایک بہترین طریقہ ہے۔
بلاگ ابتدا میں صرف ویب سائٹ پر شائع ہونے والی تحریروں کو ہی کہا اور سمجھا جاتا تھا، لیکن جیسے جیسے سوشل میڈیا نے مقبولیت کے مدارج طے کیے، کئی سوشل نیٹ ورکنگ سائٹس وجود میں آئیں اور بلاگنگ بھی وسعت اختیار کرتی گئی۔ اب بلاگ صرف تحریری مواد کے لیے مخصوص نہیں، بلکہ اس کی کئی دیگراقسام بھی متعارف کروائی جاچکی ہیں۔ جیسا کہ ویڈیو بلاگ، اسکیچ بلاگ، فوٹوبلاگ اورمیوزک بلاگ وغیرہ۔
ذاتی بلاگر یا ویب سائٹ
بلاگنگ کے لیے ضروری نہیں کہ آپ کسی ویب سائٹ کے لیے لکھیں، بلکہ آپ اپنا ذاتی بلاگ یا ویب سائٹ بھی بنا سکتے ہیں۔ کئی بلاگز اور ویب سائٹ آپ کو فری اور پیڈ بلاگ بنانے کی سہولت فراہم کرتے ہیں، جن میں سر فہرست بلاگر اور ورڈ پریس ہیں۔ آپ ان پر فری یا پیڈ بلاگ بنا کر لکھ سکتے ہیں۔خواتین اور لڑکیاں گھر بیٹھے لیپ ٹاپ یا اسمارٹ فون کے ذریعہ ہی بہ آسانی اپنا بلاگ لکھ کر کمائی کی راہ ہموار کرسکتی ہیں۔
آسان لفظوں میں آپ اسے ڈیجیٹل ڈائری بھی کہہ سکتے ہیں، جہاں آپ اپنے نقطۂ نظر، اپنے تجربات و مشاہدات اور خیالات کو لاکھوں لوگوں تک پہنچا سکتے ہیں۔ معاشرتی مسائل، سیاست، تعلیم، کھیل، فیشن اور دیگر کئی چیزوں پر تبصرے کرسکتے ہیں۔ جہاں لکھنے کے لیے آپ کسی ادارے یا ویب سائٹ کی پالیسیز کے پابند نہیں ہوتے۔
ہماری کچھ طالبات کو پی ایچ ڈی اور ایم فل کے مقالات کے لیے یہ موضوعات منتخب کرنے چاہئیں۔‌کال سینڑز اور سافٹ ویئر کمپنیوں میں خواتین ملازمین کی صورتحال، اعلیٰ سطح کے دفاتر میں خواتین کا جنسی استحصال، ٹی وی سیریلوں کے مشتملات اور ان کے نفسیاتی اثرات، اشتہارات میں عورت کا استحصال، اخبارات میں فحش نگاری اور اس طرح کے دیگر موضوعات پر سائنٹفک تحقیقات کے ذریعہ اگر اچھی رپورٹیں شائع ہوں تو اس سے بھی اس مسئلہ کو آگے بڑھانے میں بڑی مدد ملے گی۔
کتاب: خواتین میں اسلامی تحریک
مصنف: سید سعادت اللہ حسینی

0 Comments

Submit a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

جنوری ٢٠٢٢