قاری کی رائے
میری پیاری ھادیہ!
خدا کی سلامتی و رحمت ہو تم پر۔
انڑنیٹ کی دنیا میں اپنے مقصد کی طرف رواں دواں تم نے اپنا ایک سال مکمل کرلیا ہے۔تمھاری اس پہلی سالگرہ پر میں دل کی گہرائیوں سے مبارک باد پیش کرتی ہوں۔ ساتھ ہی دعا کرتی ہوں کہ اللہ رب العزت تمہیں دن دوگنی رات چوگنی ترقی و مقبولیت نصیب فرمائے۔ تمہاری مقبولیت کے کیا کہنے! تمہاری پہنچ تحریکی حلقوں سے آگے بڑھ کر عوام الناس کے دائرے میں ہوچکی ہے۔اتنے کم وقت میں تمہاری یہ رفتار کوئی معمولی بات نہیں ہے۔ میں کوئی شاعرہ تو نہیں کہ تمہاری تعریف میں منظوم حال دل سناؤں…! ہاں مگر حقیقت بتا دیتی ہوں۔
انٹرنیٹ کی دنیا میں تم پاکیزہ معاشرے کا ایسا عظیم الشان محل تعمیر کررہی ہو جو قرآنی تعلیمات کے مطابق ہے اورجس میں خیر ہی خیر ہے۔ تحریکِ اسلامی، اسلام کا ایک مکمل نظام حیات پیش کرتی ہے۔ تمہارے مشمولات بھی اسی کو ظاہر کرتے ہیں۔
اپنے دامن میں قاری کی رائے کو تم نے سب سے پہلے جگہ دے کر قاری اور رسالہ کے رشتے کو تقویت دی ہے۔میری ھادیہ! تم نہ صرف قارئین کے لیے سود مند ثابت ہو رہی ہو بلکہ نئے لکھنے والوں کے لیے بھی بہترین پلیٹ فارم فراہم کر رہی ہو۔ تعمیری فکر، مثبت سوچ اور اسلامی حدود کی پاسداری کا تم نے روز اول جو وعدہ کیا تھا، ہم تمھیں اس پر پورا پاتے ہیں،سبحان اللہ۔
’اولاد کا مستقبل آپ کے ہاتھ‘ کے تحت تم خوابیدہ ماؤں کو بیدار کرنے کا عظیم کام انجام دے رہی ہو۔ہم امید کرتے ہیں کہ ماضی میں ماؤں سے جو غلطیاں اور کوتاہیاں سرزد ہو چکی ہیں، ان کی اب تلافی ہوگی اور نئی نسل کی ایک ایسی سر سبز فصل اگے گی، جو اپنے رب کے اذن سے ہر وقت اپنی پیداوار دیتی رہے گی۔
خواتین کی معاشرتی الجھنوں کو بھی تم خوب سلجھا رہی ہو۔طالبات کو تعلیم و روزگار سے جوڑنے کا بھی خوب نظم کیا ہے۔اور ہاں! ننھے آرٹسٹ کو بھی تم خوب پروان چڑھا رہی ہو۔
تمہارا سیاسی منظرنامہ اور تبصرہ ایک عام خاتون کو بھی حالاتِ حاضرہ سے واقف کرارہا ہے۔اکثریت و اقلیت کی گتھیاں اور غلامی سے نکلنے کی راہیں سمجھا رہا ہے۔ہم امید کرتے ہیں کہ تمہارے ذریعے سے حق کو باطل پر غلبہ حاصل ہو گا ۔سب مسلمان فرقہ بازی اور فضولیات چھوڑ کر ایک شجرۂ مبارکہ لاالہ الااللہ کی گرد جمع ہو جائیں گے ،جس کا ایک عقیدہ ہے اورجس کی جڑیں نہایت مضبوط اور شاخیں آسمان میں پھیلی ہوئی ہیں ۔خلافت اسلامیہ دوبارہ قائم ہوگی اور پوری دنیا کے مسلمانوں کو ایک امت بنا دے گی۔یہ کام انتہائی مشکل اور نازک ہے۔ اس کے لیے فکری انقلاب چاہیے ، جس کی ابتدا تم کر چکی ہو ۔ شمارے کی تاریخ سے قبل Current issues پر تمہارا Debate منعقد کرنا، تمہاری برق رفتاری کو ثابت کرتا ہے ۔
تحریکی خاتون اول کو پیش کر کے تم نے ہمیں اپنے احتساب کرنے کی دعوت دی ہے۔ دنیا جہاں سے واقف کرا کرہمیں بتا دیا کی اصل دائرۂ کار تمہارا گھر ہے، وہ متأثر نہ ہو،اس بات نے مجھے بہت متأثر کیا ۔سمجھ آیا کہ انقلاب کے لیے تم اپنے قارئین کو کیسے ماہرین میں بدلنا چاہتی ہو۔ھادیہ !واقعی تم عظیم ہو۔
تمھاری عظمت کو سلام۔
دعاگو
تحسین عامر
یہ خوش آئند بات ہے کہ ھادیہ ٹیم کے لیے روزِاول سے آپ کا رشتہ ھادیہ کے ساتھ بندھا ہوا ہے ۔امید کرتے ہیں کہ ہمیشہ ہی بندھا رہے گا ۔یہ سالانہ تقریب کا پُرمسرت موقع واقعی شکر سے سر بارگاہِ ایزدی میں جھکا دیتا ہے ۔
اللہ اپنے مشن کا کام ہم سب سے لےلے ۔ شکریہ

ایڈیٹر ھادیہ ای ۔میگزین

0 Comments

Submit a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

مارچ ٢٠٢٢