یا رب! تو مری قوت برداشت بڑھا دے
الفاظ کے دکھ سے نہ پریشان رہوں میں
میرے یہ قدم حق پہ یوں مضبوط جما دے
باطل کی تمناؤں سے انجان رہوں میں
اپنوں کا مجھے مخلص و غمخوار بنا دے
بیگانوں کی تکلیف میں ہلکان رہوں میں

2 Comments

  1. نام *ڈاکٹرہادیہ نوشین

    ماشاءاللہ بہت خوب

    Reply
  2. شیخ

    الحمدللہ

    Reply

Submit a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

نومبر٢٠٢٢